Let's start poetry competion
#1
Ishq ka matlab kaya

اُس نے خَط میں
عِشق کا مَطلَب پُوچھ لِیا ہے
میں نے لِکھا ہے!
جَب کَوئی چَہرہ دَھیان میں آ کَر
مَن آنگَن میں پُھول کِھلا دے
جَب کَوئی نام لَبُوں کَو چُھو کَر
دَھڑکنُوں کَو تَرتِیب بُھلا دے
جَب کَوئی جَذبہ کارِ جُنُوں سے
آتِش کَو گُلزار بنا دے
لَیکِن اِتنا دَھیان میں رَکھنا
کَوئی صِراطِ عِشق سے گُزرے
تَب کُھلتا ہے
عِشق سے پَہلے عِشق کا مَطلَب
کَب کُھلتا ہے... —

ﺍﯾﮏ ﺁﺳﻤﺎﮞ ﮐﻮ ﭼﮭﻮﻧﮯ ﮐﯽ ﺣﺴﺮﺕ ﻣﯿﮟ ﭘﺮ ﮔﺌﮯ
ﮨﻢ ﺍﻥ ﮐﮯ ﮔﮭﺮ ﮔﺌﮯ ﻧﮧ ﺍﭘﻨﮯ ﮨﯽ ﮔﮭﺮ ﮔﺌﮯ
ﺍﯾﺴﮯ ﺗﻮ ﺗﯿﺮﺗﺎ ﮨﮯ ﺍﻥ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﮐﯽ ﺟﮭﯿﻞ ﻣﯿﮟ
ﺍﮮ ﭼﺎﻧﺪ ﺗﺠﮫ ﮐﻮ ﮈﮬﻮﻧﮉﻧﮯ ﮨﻢ ﺩﺭ ﺑﺪﺭ ﮔﺌﮯ
ﻭﻋﺪﻭﮞ ﮐﮯ ﭘﮭﻮﻝ ﺳﺎﻧﺲ ﮐﯽ ﮈﺍﻟﯽ ﭘﮧ ﺗﮭﮯ ﺟﻮﺍﮞ
ﺟﻮ ﺍﻥ ﮐﮯ ﺍﻧﺘﻈﺎﺭ ﻣﯿﮟ ﮐﮭﻞ ﮐﺮ ﺑﮑﮭﺮ ﮔﺌﮯ
ﻭﮦ ﺟﺲ ﺟﮕﮧ ﮐﮧ ﺯﻧﺪﮦ ﺟﮩﺎﮞ ﭘﯿﺎﺭ ﺩﻓﻦ ﮨﮯ
ﺍﭘﻨﮯ ﺍﺳﯽ ﻣﺰﺍﺭ ﭘﮧ ﺷﺎﻡ ﻭ ﺳﺤﺮ ﮔﺌﮯ
ﯾﮧ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﮨﮯ ﭼﻨﺪ ﮨﯽ ﻟﻤﺤﻮﮞ ﮐﺎ ﺭﺍﺳﺘﮧ
ﺍﻥ ﭼﻨﺪ ﻟﻤﺤﻮﮞ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﺑﺮﺳﻮﮞ ﮔﺰﺭ ﮔﺌﮯ

1 more
آنکھوں میں کوئی خواب اُترنے نہیں دیتا
یہ دل کہ مجھے چین سے مرنے نہیں دیتا
بچھڑے تو عجب پیار جتاتا ہے خطوں میں
مل جائے تو پھر حد سے گزرنے نہیں دیتا

وہ شخص خزاں رُت میں محتاط رہے کتنا
سوکھے ہوئے پھولوں کو بکھرنے نہیں دیتا

اِک روز تیری پیاس خریدے گا وہ گبرو
پانی تجھے پنگھٹ سے جو بھرنے نہیں دیتا

وہ دل میں تبسم کی کرن گھولنے والا
روٹھے تو رُوتوں کو بھی سنورنے نہیں دیتا

میں اُس کو مناؤں کہ غمِ دہر سے اُلجھوں
محسن وہ کوئی کام بھی کرنے نہیں دیتا..

main hamesha ulajh si jati hun
raat k paish-e-nazar main...


jab koi ghazal mai likhti hun...
haath kahin ruk jata hai..
yaad kahin kho jati hai...
main ulajh si jati hun...
apne he khayalon main...
inhin purani baaton main...
tere sang guzaray lamhon main...
main ulajh se jati hun..
jb tm kisi or se baatain kartay ho..
kisi or k sang jb hanstay ho....
main apne haath utha leti hun.
or hamesha ulajh si jati hun...
apne haathon ki lakeeron main...
dil main bani tasweeron main...
purani taweel tehreeron main...
main hamesha ulajh si jati hun..
apne haath pe likhay un lafzon main...
jo dikhtay b nahi or mit'tay b nahi..
phr yaad ye akser karti hun...
tum BE-WAFA to nahi thay phr bhi..
main hamesha uljh si jati hun........
mai hamesha ulajh si jati hun;;;;;
#2
اُن کے ہونٹوں پہ ہے۔۔۔۔ ہنسی تنہا
میری آنکھوں میں ہے۔۔۔۔نمی تنہا

یوں تو محرومیاں ۔۔۔بہت سی تھیں
یاد آئی تری ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔کمی تنہا

دیکھیے کب بنے یہ۔۔۔۔ دل کی لگی
کر رہے ہیں وہ۔۔۔۔۔۔ دل لگی تنہا

ساتھ ہوتے ہیں ۔۔۔۔عشوہ و غمزہ
نہیں ہوتی یہ ۔۔۔۔۔۔دلبری تنہا

عشق میں سب نے ساتھ چھوڑ دیا
رہ گئی دل میں ۔۔۔۔۔بے کلی تنہا

دوست احباب چل دیئے سارے
میں نہیں کرتا ۔۔۔۔مےکشی تنہا

رو رہا ہوں کہ گھر کے ۔آنگن میں
ہنس رہی ہو گی۔۔۔۔۔ چاندنی تنہا

منزلِ عشق ہم سے۔۔۔ دور نہیں
ساتھ دے گر ۔۔۔۔۔دِوانگی تنہا

لوگ کہتے ہیں ہم کو۔۔ ۔دیوانہ
اور ہمیں ہی ہے۔۔۔۔۔ آگہی تنہا

اُس سے کرتا ہوں آپ کی باتیں
جب بھی ملتی ہے۔۔۔ خامشی تنہا

وہی دنیا میں۔۔۔۔۔۔ سربلند ہوا
جس نے پائی ہے۔۔۔ عاجزی تنہا

یاد رکھنا وفا کی راہوں۔۔۔۔ میں
آڑے آتی ہے۔۔۔ خودسری تنہا

ہر اذیّت تری میں۔۔۔ سہ لوں گا
چھوڑ دے گر تُو ۔۔۔بے رُخی تنہا

آج اُمید ساتھ۔۔۔۔۔ چھوڑ گئی
کیسے کاٹوں گا ۔۔۔۔۔زندگی تنہا

ایک تُو ہی نہیں جلا۔۔۔ اے دل
شمع بھی رات بھر۔۔۔۔ جلی تنہا

کیسے کہیےگا مدّعا ۔۔۔۔۔۔اُن سے
وہ تو ہوتے نہیں ۔۔۔۔۔کبھی تنہا

ساتھ تھا سلسلہ۔۔۔۔ مصائب کا
کب ملی ہم کو۔۔۔۔۔ مفلسی تنہا

میرے مولا مجھے ۔۔عطا کر دے
اُن کے چہرے کی۔۔ روشنی تنہا

تیرے دل کی بیماریوں۔ کا علاج
ایک ہی ہے یہ ۔۔بے خودی تنہا

رہ گئے مے کدے میں آخر کار
ایک میں اور۔۔۔۔۔ تشنگی تنہا

ساری دنیا کے دکھ اُٹھا کےوسیم
کر رہا ہوں میں۔۔ شاعری تنہا
#3
Nice @rana ,,,,ap b poetry karty h grt

میں اوجی کوجی جو وی ہاں
میں داسی سوہنے یار دی ہاں.
او اک واری جو موڑ موہار آوے
رستے شام سویرے نہاردی ہاں
او میرا ماہی اوہی میرا سوہنا.
میں جند جان اسے تو واردی ہاں
میں داسی سوہنے یار دی ہاں.
گل وچ مالا عشق دی پاکے نی
میں من دے مالک نو پکاردی ہاں
عشق نے ماریاں ایسیاں چهمکاں
میں نچ نچ سرکار پکار دی ہاں.
درد دیوے "نوروز " او درد کٹے
میں عشق نو رب پکار دی ہاں..
#4
Hanji, achi poetry sun lete hain kabhi kabhi... bas yad ni hoti.

مدّت ہوئی ہے، یار کو مہماں کئے ہوئے
جوشِ قدح سے بزمِ چراغاں کئے ہوئے

کرتا ہوں جمع پهر جگر لخت لخت کو
عرصہ ہوا ہے دعوتِ مژگاں کئے ہوئے

پهر وضعِ احتیاط سے رُکنے لگا ہے دم
برسوں ہوئے ہیں چاکِ گریباں کئے ہوئے

پهر گرمِ نالہ ہائے شرر بار ہے نفس
مدّت ہوئی ہے سیر چراغاں کئے ہوئے

پھر پرسشِ جراحتِ دل کو چلا ہے عشق
سامانِ صد ہزار نمک داں کئے ہوۓ

پهر بهر رہا ہے خامہ مژگاں، بہ خونِ دل
سازِ چمن طرازیِ دَاماں کئے ہوئے

باہم دِکر ہوئے ہیں دل و دیده پهر رقیب
نظّاره و خیال کا سَاماں کئے ہوئے

دِل پهر طوافِ کوۓ ملامت کو جائے ہے
پندار کا صنم کده ویراں کئے ہوئے

پهر شوق کر رہا ہے خریدار کی طلب
عرضِ متاعِ عقل و دل و جاں کئے ہوے

دوڑے ہے پهر ہر ایک گُل و لالہ پر خیال
صد گلستاں نِگاه کا ساماں کئے ہوے

پهر چاہتا ہوں نامہ دلدار کهولنا
جاں نزرِ دل فریبی عنواں کئے ہوے

مانگے ہے پهر، کسی کو لبِ بام پر ہوس
زلفِ سیاہ رُخ پہ پریشاں کئے ہوے

چاہے ہے پهر، کسی کو مقابل میں، آرزو
سرمہ سے تیز دشنہ مژگاں کئے ہوے

اک نو بہارِ ناز کو تا کے ہے پهر نِگاہ
چہرہ فروغِ مے سے گُلستاں کئے ہوئے

پهر، جی میں ہے کہ در پہ کسی کے پڑے رہیں
سر زیر بارِ منّتِ درباں کئے ہوئے

جی ڈهونڈتا ہے پهر وہی فرصت کے رات دن
بیٹهے ہیں تصّورِ جاناں کئے ہوئے

غالب! ہمیں نا چهیڑ کہ پهر جوشِ اشک سے
بیٹهے ہیں ہم تہیّہ طوفاں کئے ہوئے
#5
Ahan nice 1

Zamany ki baghawat
tujhy mery wajood se door to le gai lekin
chaand dekh k kabi
tanhai ka ehsas ho to
thokar lgny pe dard na seh pao to
kissi phool se pheli hoi khushboo bhi taskin na de to
jab doston ki mehfil mein bhi tanhai mehsoos ho to
samajh lena tumhy meri zaroort haii...
tumhy mujh se muhabat hai...


one more
Meri benaam hasti mein kissy dilchaspi hy Jerry
Meri muskan bemani,,mery aansoo b bemani..
#6
Sochna Chor Bhi De Aye Dil-E-Nakaam Usy
Tere Siwa Bhi Hain Duniya Main Kayi Kaam Usy

Tu K Barbad Hai, Bad-Naam Hai, Gum-Naam Bhi Hai
Chahte Hain Kayi Mash-Hoor Naik Naam Usy

Tu K Har Dor Ki Har Daur Main Nakaam Raha
Aur Milte Hi Chale Aye Hain Inaam Usy

Teri Qabar Pe Tu Kutba Na Theher Paye Ga
Acron Mil Gaye Hain Maqbary K Naam Usy

Teri Khushiyon Main Khush Tha Haye Afsos Magar
Tere Gham Ka Na Raha Koi Ehtaraam Usy

Sambhal Dil Ko Asad Apne Aur Sakoon Se Phir
KHUDA Pe Chor De, Karne De Us K Kaam Usy...
#7
Sawaal Kuch Bhi Ho,
Jawaab Tum Hi Ho
Raasta Koi Bhi Ho,
Manzil Tum Hi Ho
Dukh Koi Bhi Ho,
Khushi Tum Hi Ho
Gussa Kitna Bhi Ho, Pyar Tum Hi Ho

kyu ki Tum hi ho ab tum hi ho…
#8
Wah! Writing your own @dil ?

Jis des ke qaatil ghundon ko ashraaf churra le ke le jayen,
Jis des ke court katchehri main insaf takon main bikta ho,
Jis des ka munshi qazi bhi mujrim se puch ke likhta ho,
Jis des ke chapay chapay par police ke nakay hote hon,
Jis des ke mandir masjid main har roz dhamakay hote hon,
Jis des main jaan ke rakhwale khud jaanen le masoomon ki,
Jis des ke hakim zalim hon siski na sunen majbooron ki,
Jis des ke adil behray hon aahain na sunen masoomon ki,
Jis des ke gali koochon main har samt fahashi pheli ho,
Jis des main bint-e-hawa ki chadar dagh se maili ho,
Jis des ke har chorahay par do char bhikari phirte hon,
Jis des main roz jahazon se imdaadi thailay girte hon,
Jis des main ghurbat maaon se bache neelaam karati ho,
Jis des ke ohda-daron se ohday na sambhalay jate hon,
Jis des ke saada-loh insaan waadon pe taalay jate hon,
Us des main rehne walon par awaz uthana wajib hai,
Us des ke har ik leader ko sooli pe charrhana wajib hai…
#9
Yahi samjh lainy @rana

Mujhe itna pyar na do Baba
Kal jane mujhe naseeb na ho
Ye jo maatha choma karte ho
Kal is par shikkan ajeeb na ho
Main jab b roti hon Baba
... Tum aansu poncha karte ho
Mujhe itni dour na chor ana
Main ro'un or tum qareeb na ho
Mere naz othate ho baba
Mere laad ludate ho baba
Meri choti choti khwahish par
Tum jaan lutate ho baba
Kal aesa ho ik nagri may
Main tanha tumko yaad karon
Or ro ro k faryad karon
Ae Allah mere baba sa
Koi pyar jatane wala ho
Mere naz othany wala ho
Mere baba mujhse ehad karo
Mujhe tum chupa kar rakho gy
Dunya ki zalim nazron se mujhe tum chupa kar
rakho gy.......!!!

& I really miss my Dad miss u a lot ,,,,dad :'(
[Image: 7e1a19bf861d055516f4fdb1bca3c79a.jpg]
#10
Ek khubsurat aur kamal Ghazal by Mirza Ghalib sahab, kya khoob shayeri hai...

سب کہاں؟ کچھ لالہ و گل میں نمایاں ہو گئیں
خاک میں کیا صورتیں ہوں گی کہ پنہاں ہو گئیں!
یاد تھیں ہم کو بھی رنگارنگ بزم آرائیاں
لیکن اب نقش و نگارِ طاقِ نسیاں ہو گئیں
تھیں بنات النعشِ گردوں دن کو پردے میں نہاں
شب کو ان کے جی میں کیا آئی کہ عریاں ہو گئیں
قید میں یعقوب نے لی گو نہ یوسف کی خبر
لیکن آنکھیں روزنِ دیوارِ زنداں ہو گئیں
سب رقیبوں سے ہوں ناخوش، پر زنانِ مصر سے
ہے زلیخا خوش کہ محوِ ماہِ کنعاں ہو گئیں
جُوئے خوں آنکھوں سے بہنے دو کہ ہے شامِ فراق
میں یہ سمجھوں گا کہ شمعیں دو فروزاں ہو گئیں
ان پری زادوں سے لیں گے خلد میں ہم انتقام
قدرتِ حق سے یہی حوریں اگر واں ہو گئیں
نیند اُس کی ہے، دماغ اُس کا ہے، راتیں اُس کی ہیں
تیری زلفیں جس کے بازو پر پریشاں ہو گئیں
میں چمن میں کیا گیا گویا دبستاں کُھل گیا
بلبلیں سُن کر مرے نالے غزل خواں ہو گئیں
وہ نگاہیں کیوں ہُوئی جاتی ہیں یارب دل کے پار؟
جو مری کوتاہئ قسمت سے مژگاں ہو گئیں
بس کہ روکا میں نے اور سینے میں اُبھریں پَے بہ پَے
میری آہیں بخیئہ چاکِ گریباں ہو گئیں
واں گیا بھی میں تو ان کی گالیوں کا کیاجواب؟
یاد تھیں جتنی دعائیں صرفِ درباں ہو گئیں
جاں فزا ہے بادہ جس کے ہاتھ میں جام آ گیا
سب لکیریں ہاتھ کی گویا، رگِ جاں ہو گئیں
ہم موحّد ہیں ہمارا کیش ہے ترکِ رسُوم
ملّتیں جب مٹ گئیں اجزائے ایماں ہو گئیں
رنج سے خُوگر ہُوا انساں تو مٹ جاتا ہے رنج
مشکلیں مجھ پر پڑیں اتنی کہ آساں ہو گئیں
یوں ہی گر روتا رہا غالبؔ تو اے اہل جہاں
دیکھنا ان بستیوں کو تم کہ ویراں ہو گہیں
  




Users browsing this thread:
1 Guest(s)